امریکی ریاست کیلی فورنیا میں مٹی کے تودے گرنے سے 13 افرادہلاک

کیلیفورنیا: (کوہ نور نیوز) غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق دنیا کے دیگر ملکوں کی طرح امریکا بھی موسمیاتی تبدیلیوں کے زیر اثر ہے، جس کی ایک مثال ریاست کیلی فورنیا میں خشک سالی اور شدید گرمی کے باعث جنگل میں لگنے والی امریکی تاریخ کی خوفناک ترین آگ اور اس کے کچھ ہی دنوں بعد شدید بارشیں ہیں۔ کیلی فورنیا کا علاقہ سانتا باربرا شدید گرمی کے بعد ہونے والی شدید بارشوں کی وجہ سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے ۔ جہاں اب تک 13 افراد کی ہلاکتوں کی تصدیق کی جاچکی ہے۔ اس کے علاوہ کم از کم 20 افراد زخمی ہیں جن میں سے 4 کی حالت تشویشناک بتائی جا رہی ہے۔ سیلاب اور کیچڑ کے سبب ساحلی ریل لائن تقریبا 50 کلومیٹر تک بند ہے، ماہرین کا کہنا ہے کہ بارش کے ساتھ مٹی کے تودے اسی علاقے میں آئے ہیں جہاں گزشتہ ماہ جنگل کی آگ سے تباہی ہوئی تھی۔ سانتا باربرا کاؤنٹی کی ترجمان امبر اینڈرسن کا کہنا ہے کہ درجنوں لوگ سمندر اور جنگل کے درمیان محصور ہوکر رہ گئے ہیں، جن کی تلاش کے لیے سراغ رساں کتوں، ہیلی کاپٹرز اور دیگر ذرائع استعمال کئے جارہے ہیں۔ دوسری جانب طوفانی بارشوں کے باعث واشنگٹن ڈی سی ،نیویارک سٹی ، بالٹی مور، فلاڈیلفیا اور بوسٹن سمیت کئی شہروں میں نظام زندگی درہم برہم ہے، ہزاروں پروازیں تاخیر کا شکار اور سیکڑوں منسوخ کردی گئی ہیں۔ امریکی محکمہ موسمیات نے رواں ہفتے کے آ خر میں وسط مغربی اور شمال مشرقی ریاستوں میں نئے سمندری طوفان کی وارننگ جاری کردی ہے جبکہ شدید بارشوں کا بھی امکان ظاہر کیا گیا ہے۔